فرضی کہانیوں کی پُرتجسس دکان
’’فرضی کہانیوں کی پُرتجسس دکان‘‘ ایک پست قد بوڑھی عورت چلاتی ہے، جس نے بہت سی جیبوں والا چغہ پہن رکھا ہے۔ ایک دن ایک چھوٹا لڑکا دکان میں داخل ہوا اور ایک رومانی داستان طلب کی۔ بوڑھی عورت نے ایک جیب میں جھانکا اور کہا، ’’آہ، یہ والی عمدہ ہے، بالکل نئی کہانی، ایک دم تازہ‘‘۔ اور اس نے اپنی خیالی کہانی کا آغاز کیا۔ یہ بچوں کے ادب کی مصنفہ کادونو اے ایکو کی لکھی ہوئی کہانی ہے۔ ان کو ہانس کرسچن اینڈرسن ایوارڈ سے نوازا گیا جسے بچوں کے ادب کے نوبل انعام یا لٹل نوبل انعام کے طور پر جانا جاتا ہے۔