دس سالہ ساتھ مگر قانون کی نظر میں نہیں
جاپان میں ایسے مخلوط (جاپانی، غیر جاپانی) ہم جنس جوڑے رہائش پذیر ہیں جو سمندر پار شادی شدہ ہیں۔ انہیں یہاں بہت سی مشکلات کا سامنا ہے کیونکہ جاپان نے ابھی تک ہم جنس شادی کو تسلیم نہیں کیا ہے۔ اس لیے یہاں انہیں وہ حقوق اور فوائد میسر نہیں جنکی مخالف جنس جوڑوں کو ضمانت حاصل ہے۔ ایسی ہی فکروں میں گھرے دو جوڑوں کی حقیقی زندگی کے بارے میں جانتے ہیں۔
ساکاتا ماچی (دائیں) اور تھریسا اسٹیگر (بائیں) دس سال سے زائد عرصے سے جاپان میں ساتھ رہ رہے ہیں۔
جاپان میں داخلے پر پابندیوں کے باعث کوموری شُنسُوکے (بائیں) اور انکے شوہر ڈینی ٹان (دائیں) ایک سال سے بھی زائد عرصے سے الگ رہ رہے ہیں۔
وکیل ناگانو یاسُوشی کہتے ہیں کہ مخلوط ہم جنس جوڑوں پر جاپان میں برائے نام یا صفر توجہ دی گئی ہے۔