کیوتو میں بیئر کی ہم آہنگ کشید
جاپان کا قدیم دارالحکومت کیوتو ملکی روایتی ثقافت کی دلکشی سموئے ہوئے ہے۔ یہاں کیوتو کے دلدادہ تین غیرملکیوں نے کرافٹ بیئر کی کشید شروع کی ہے۔ شروع میں کاروبار خوب چلا لیکن پھر کورونا وائرس کی عالمی وبا آ گئی۔ اس بار کا پروگرام ان تینوں کے اس عزم پر ڈٹے رہنے کے بارے میں ہے کہ مشکل ترین حالات میں بھی کیوتو کی حقیقی بیئر ہی کشید کرنی ہے۔ (یہ پروگرام پہلی بار 11 جنوری 2022 کو نشر کیا گیا تھا۔)
کرس ہینج آؤموری میں ایک اسکول میں انگریزی پڑھایا کرتے تھے لیکن پھر اپنے خواب کی تکمیل کے لیے کیوتو منتقل ہوئے اور 2015 میں دوستوں کے ساتھ مل کر کرافٹ بیئر کی کشید گاہ کھولی
منفرد ذائقے اور مہک کے سبب اس کشید گاہ کی کرافٹ بیئر نے مقبولیت پائی لیکن پھر کووڈ 19 کی آمد سے انکے گاہک کاروباروں یعنی ریستورانوں اور شراب خانوں پر پابندیاں لگیں اور فروخت ستانوے فیصد تک گر گئی
تینوں نے مقامی ہاپ کے استعمال سے کیوتو کی حقیقی بیئر کی منزل پر پہنچنے کا سفر جاری رکھا ہے
عالمی وبا کے دوران بقا کی جنگ لڑتے ہوئے، وہ شمالی کیوتو پریفیکچر کے یوسانو قصبے میں کاشت کردہ ہاپ سے بیئر کشید کرنے میں کامیاب ہو گئے