مطالعہ جاپان: ’’ٹیلیفون دھوکہ اور فرنچ ٹوسٹ‘‘ تیسرا حصہ
شوتا جب رقم لینے فلیٹ پر پہنچتا ہے تو، ’’امی‘‘ اُسے طویل مدت سے بچھڑا بیٹا سمجھ کر وارے وارے جاتی ہے۔ اس قدر شفقت اور محبت ملنے کے بعد وہ رقم لیکر نو دو گیارہ نہیں ہونا چاہتا اور نوکری ملنے کے بعد روزانہ کی بنیاد پر اُس شفیق خاتون سے ملنے اور گپ شپ کرنے جانے لگتا ہے۔