جاپان، امریکہ اور فرانس کی مشترکہ بحری مشقوں کا انعقاد

جاپان کی بحری سیلف ڈیفنس فورس، ایم ایس ڈی ایف نے امریکہ اور فرانس کے فوجی بحری جہازوں کے ساتھ جنوب مغربی جاپان کے کیوشُو کے نزدیک سمندر میں مشترکہ مشقیں کی ہیں۔

ایم ایس ڈی ایف نے کہا ہے کہ اُس کا مال منتقلی کی صلاحیت کا حامل بحری جہاز ہَمانا، امریکی جنگی بحری جہاز کرٹس ولبر اور فرانس کی فریگیٹ پریریئل نے جمعہ کے روز سمندر میں ایک بحری جہاز سے دوسرے بحری جہاز میں تیل اور سامان وغیرہ منتقل کرنے کی سہ فریقی مشق انجام دی۔

جاپان اور فرانس نے حصول اور ایک دوسرے کو فراہمی کے سمجھوتے، اے سی ایس اے پر 2019ء میں دستخط کیے تھے۔ یہ سمجھوتہ دونوں ملکوں کی ڈیفنس فورسز کو خوراک، ایندھن اور گولہ بارود جیسا سامان ایک دوسرے کو فراہم کرنے کی اجازت دیتا ہے۔ مذکورہ سمجھوتے کے تحت سمندر میں ایک بحری جہاز سے دوسرے بحری جہاز میں تیل اور سامان وغیرہ منتقل کرنے کی مشق اس طرح کی پہلی کاروائی تھی۔

اس مشق میں حصہ لینے والی فرانسیسی فریگیٹ کو رواں ماہ سے بحیرۂ مشرقی چین بھیجا گیا تھا جس کا مقصد شمالی کوریا کی جانب سے ایک بحری جہاز سے دوسرے بحری جہاز میں منتقلی کی نگرانی کرنا ہے۔

ایک بحری جہاز سے دوسرے بحری جہاز میں تیل اور سامان وغیرہ منتقل کرنے کی مشق کا مقصد فوجی انصرام سے متعلقہ مدد فراہم کرنے کے علاوہ بظاہر ان ملکوں کے مابین مضبوط تعاون کا مظاہرہ کرنا تھا چونکہ چین نے اپنی بحری سرگرمیوں میں اضافہ کر دیا ہے۔