آسٹریلین اوپن یادوں میں نقش رہے گا: اوساکا ناؤمی

ٹینس کی ممتاز کھلاڑی اوساکا ناؤمی نے کہا ہے کہ ہفتے کے روز منعقدہ آسٹریلین اوپن کے فائنل کا ماحول اُن کی یادوں میں نقش رہے گا۔

اوساکا نے اتوار کے روز میلبورن میں نامہ نگاروں سے گفتگو کی۔ قبل ازیں، ایک روز پہلے انہوں نے آسٹریلین اوپن کا اعزاز دوسری بار جیتا تھا۔ انہوں نے خواتین کے سنگلز فائنل میں امریکہ کی جینیفر بریڈی کو شکست دی تھی۔

اوساکا نے کہا کہ وہ بیان نہیں کر سکتیں کہ کیسا محسوس کر رہی تھیں۔ اُن کا مزید کہنا تھا کہ گرینڈ سلام فتوحات کے بعد اپنے جذبات پر قابو پانے میں انہیں ہمیشہ کئی دن لگتے ہیں۔

ممتاز جاپانی کھلاڑی کا کہنا تھا کہ وہ ایک بار پھر شائقین کے سامنے کھیلنے سے لطف اندوز ہوئیں اور جو لوگ انہیں دیکھنے کیلئے آئے وہ اُن کی مشکور ہیں۔

اوساکا نے گزشتہ سال کا یوایس اوپن فائنل جیتا تھا جو شائقین کے بغیر منعقد ہوا تھا۔

اس سال موسم گرما میں منعقد ہونے والے ٹوکیو اولمپکس کے بارے میں اُنہوں نے کہا کہ یہ کھیل اُن کیلئے بہت اہمیت رکھتے ہیں اور یہ ایک خواب ہو گا۔

اُن کا مزید کہنا تھا کہ وہ اس بارے میں نہ سوچنے کی کوشش کر رہی ہیں کیونکہ ابھی موسمِ گرما آنے میں کچھ وقت ہے تاہم وہ سمجھتی ہیں کہ ہر کھلاڑی شرکت کا متمنی ہے۔