تویوما میں ویکسین کے ممکنہ ضمنی اثرات کی اطلاع

وسطی جاپان کے تویاما پریفیکچر میں کورونا وائرس کی ویکسین کے ممکنہ ضمنی اثرات سامنے آنے کی اطلاع ملی ہے۔ جاپان میں اس نوعیت کا یہ پہلا کیس ہے۔

جاپان نے ویکسین لگانے کا پروگرام بدھ کے روز سے شروع کیا تھا۔ ابتدائی ہدف تقریباً40 ہزار طبی کارکنوں کو ویکسین لگانا ہے۔

حکومت نے ہفتے کے روز ٹوئیٹر پر اعلان کیا کہ تویاما روسائی ہسپتال میں ایک شخص کو ویکسین لگانے کے بعد جمعہ کے روز اسکی جلد پر سرخ دھبّے نمودار ہوئے ہیں۔

کِتاساتو یونیورسٹی کے خصوصی طور پر تقرر کردہ پروفیسر ناکایا تیتسُواو نے بتایا کہ جلد پر سرخ دھبّے نمودار ہونا ایک معمولی ضمنی اثر ہے جو عموماً فلُو یا دیگر متعدی امراض کی ویکسینیشن کے بعد کبھی کبھار رُوپذیر ہو جاتے ہیں۔

جناب ناکایاما نے کہا کہ لوگوں کو اس پر بہت زیادہ فکر کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔

انہوں نے بتایا کہ اس وقت زیر استعمال ویکسین میں موجود پولیئتھلین گلائی کول نامی مادے کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ ممکنہ طور پر اس کی وجہ سے ایسا ضمنی اثر ہو جاتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مذکورہ کیس میں انہیں کوئی خصوصی غیر معمولی امر نظر نہیں آیا۔