ٹیپکو نے مسخ شدہ فیول یونٹس تالاب سے ہٹا دیے

2011 کے طاقتور زلزلے اور تسونامی میں ناکارہ ہونے والے فُکوشیما دائی ایچی ایٹمی بجلی گھر کی منتظم کمپنی نے نمبر تین ری ایکٹر عمارت کے ذخیرہ تالاب سے جوہری ایندھن کی چار مسخ شدہ اسمبلیاں نکال دی ہیں۔ یہ کام اس جوہری پلانٹ کو مکمل ختم کرنے کے عمل کا حصہ ہے۔

ٹوکیو الیکٹرک پاور کمپنی، ٹیپکو، کا کہنا ہے کہ اِن چار یونٹوں کو ہٹانے کا کام اس نے اسی ماہ شروع کیا اور رواں ہفتے مکمل کر لیا۔

ٹیپکو نے نجی شعبے کی ایک کمپنی کے اشتراک سے تیار کردہ آلات سے یہ کام سر انجام دیا۔

اس مشین میں خصوصی طور پر ڈیزائن کردہ گرفت لگی ہے تاکہ اُن فیول یونٹس کو پکڑ کر اٹھایا جا سکے جنکے اوپری دستے، سنہ 2011 کے سانحہ میں عمارتی ملبہ گرنے سے بری طرح مسخ ہو گئے تھے۔

ٹیپکو کا کہنا ہے کہ تالاب سے اوپر اٹھاتے وقت مذکورہ چار یونٹوں میں معمولی جھکاؤ آیا لیکن انہیں وہاں سے نکالنے کا عمل کسی حفاظتی مسئلے کے بغیر مکمل ہوا۔

ٹیپکو نے اپریل 2019 میں، غیر استعمال شدہ اور استعمال شدہ ایندھن کے تمام 566 یونٹس کو تالاب سے پلانٹ کے احاطے میں ایک محفوظ تنصیب کے اندر منتقل کرنے کا کام شروع کیا تھا۔ ان میں مذکورہ چار مسخ شدہ اسمبلیاں بھی شامل تھیں۔

ٹیپکو، تالاب میں موجود باقی ماندہ بائیس یونٹ، اگلے ماہ کے اختتام تک منتقل کر دینے کی امید رکھتی ہے۔