امریکہ نے ایران پر پابندیوں کی بحالی کا اقدام واپس لے لیا

امریکی صدر جو بائیڈن کی انتظامیہ نے ایران پر اقوام متحدہ کی پابندیاں دوبارہ عائد کرنے کے لیے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ کے تحت کیے گئے اعلان کو واپس لے لیا ہے۔ یہ اقدام ایک ایسے وقت اٹھایا گیا ہے، جب امریکہ نے تہران کے ساتھ رابطہ کھلا رکھنے کی خواہش کا واضح اظہار کیا ہے۔

مقامی میڈیا کی اطلاعات کے مطابق اقوام متحدہ میں امریکہ کے ناظم الامور نے جمعرات کے روز سلامتی کونسل کو ایک خط میں کہا ہے کہ امریکہ پابندیاں عائد کرنے کے مطالبے سے دستبردار ہو رہا ہے۔

ٹرمپ انتظامیہ نے 2015 میں طے پانے والے جوہری معاہدے میں شامل ایک شق گزشتہ سال یہ کہتے ہوئے نافذ کرنے کی کوشش کی تھی کہ ایران شرائط کی خلاف ورزی کر رہا ہے۔ مذکورہ شق کے تحت اقوام متحدہ کی پابندیاں ازخود عائد ہو جاتی ہیں۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے تقریباً تمام ارکان نے اس تجویز کی مخالفت کی تھی۔

اس موقع پر کئی ایک نے سوال اٹھایا تھا کہ واشنگٹن ایک ایسے معاہدے کو کیسے نافذ کر سکتا ہے، جس سے وہ خود دستبردار ہو چکا ہے۔