ایران، منگل سے معائنے روک دے گا : آئی اے ای اے

بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی ’آئی اے ای اے‘ کے مطابق، ایران نے اسے آگاہ کیا ہے کہ وہ آئندہ ہفتے منگل سے، اس بین الاقوامی ادارے کے اچانک معائنے روک دے گا۔

آئی اے ای اے نے منگل کے روز این ایچ کے کو بتایا کہ ایران نے اسے ایسے معائنے معطل کرنے سے آگاہ کر دیا ہے جو سنہ 2015 میں بڑی عالمی طاقتوں کے ساتھ ہونے والے جوہری معاہدے کے تحت اس کے جوہری مراکز پر ہوتے تھے۔

بین الاقوامی جوہری نگران ادارے کے مطابق، اس کے ڈائریکٹر جنرل رافائل گروسی تہران کا دورہ کر سکتے ہیں، تاکہ اس کے ساتھ تعاون جاری رکھنے کے لیے بات چیت کی جا سکے۔

ایران خبردار کرتا آیا ہے کہ اگر امریکہ اس پر عائد کردہ پابندیاں نہیں اٹھاتا تو وہ جوہری معاہدے کے اضافی پروٹوکول پر عملدرآمد معطل کر دے گا، جس کے تحت عالمی ادارے کو اچانک معائنوں اور دیگر تصدیقی سرگرمیوں کی اجازت حاصل ہے۔

معائنے روک دیے جانے سے ’آئی اے ای اے‘ کے لیے ایران کے جوہری پروگرام اور اس کے ممکنہ فوجی استعمال کی تصدیق مشکل ہو جائے گی۔

ایران کے اس اقدام کو امریکی صدر جو بائیڈن کی انتظامیہ پر وہ پابندیاں ہٹانے کے لیے دباؤ مزید بڑھانے کے حربے کے طور پر دیکھا جا رہا ہے، جو ان کے پیشرو ڈونلڈ ٹرمپ نے عائد کی تھیں۔