آنگ سان سُو چی کی حراست میں توسیع

میانمار کی برطرف شدہ رہنما آنگ سان سُو چی کی مدت حراست میں توسیع کر دی گئی ہے۔ محترمہ سُو چی اور صدر وِن مِن سمیت کئی افراد کو یکم فروری کو فوجی انقلاب کے بعد حراست میں لے لیا گیا تھا۔ محترمہ سُو چی کی حراست کا خاتمہ بدھ کو متوقع تھا۔

محترمہ سُو چی کے ایک وکیل اور عدالتی حکام نے دارالحکومت نیپی دو میں منگل کے روز نامہ نگاروں کو الگ الگ بتایا کہ برطرف شدہ رہنما پر دستی ریڈیو سیٹوں کی غیر قانونی درآمد اور ان کے بغیر اجازت استعمال کا الزام ہے۔

انہوں نے بتایا کہ محترمہ سُو چی پر گزشتہ سال انتخابی مہم کے دوران کورونا وائرس کے ضوابط کی خلاف ورزی کا بھی الزام ہے۔ جناب وِن مِن پر بھی یہی الزام ہے۔

اطلاعات کے مطابق دونوں رہنماؤں نے عدالتی کارروائی میں آن لائن حصہ لیا۔ عدالت کی اگلی سماعت یکم مارچ کو ہوگی۔

فوج کے ایک ترجمان نے بتایا کہ محترمہ سُو چی اور جناب وِن مِن، دونوں کی صحت ٹھیک ہے۔

محترمہ آنگ سان سُو چی کی حراست میں توسیع کے بعد اب احتجاجی مظاہروں میں شدت آنے کا امکان ہے۔