جاپان میں طبی کارکنان کو کورونا ویکسین کے ٹیکے لگانے کا عمل شروع

جاپان نے ملک بھر کے طبی مراکز میں طبی کارکنان کو ویکسین کے ٹیکے لگانے شروع کر دیے ہیں۔

امریکی دوا ساز کمپنی فائزر اور اسکی جرمن شراکتدار بیون ٹیک کی تیار کردہ یہ ویکسین، ایک سو ہسپتالوں میں تقریباً چالیس ہزار طبی کارکنان پر مشتمل پہلے گروپ کو لگائی جائے گی۔

قومی ٹوکیو طبی مرکز میں کارکنان کو ویکسین لگانے کا عمل بدھ کو شروع ہو گیا۔ انہیں دوسرا ٹیکہ تین ہفتے بعد لگایا جائے گا۔ اس طبی مرکز کے تقریباً 800 طبی کارکن ویکسین کے ٹیکے لگوانے والے پہلے گروپ کا حصہ ہونگے۔

جاپانی وزیر مملکت برائے صحت، محنت اور بہبود یاماموتو ہیروشی نے کہا ہے کہ وزارتِ صحت طبی کارکنان اور مقامی حکومتوں کے ساتھ مل کر کام کرے گی اور انکی آراء سنے گی تاکہ جاپان میں لوگوں کو ذہنی سکون کے ساتھ جلد سے جلد ٹیکے لگانے کا کام خوش اسلوبی سے مکمل کرنے میں اپنی تمام تر کوششیں بروئے کار لا سکے۔

وزارت صحت کا منصوبہ ہے کہ ابتدائی گروپ میں دوسرا ٹیکا لگوا چکنے والوں میں سے بیس ہزار افراد کا چار ہفتوں پر مشتمل سروے کرے تاکہ بخار جیسے مضر ضمنی اثرات کی جانچ کی جا سکے۔ وزارت وقتاً فوقتاً نتائج کا اجرا کرے گی۔

وزارت، باقی ماندہ 37 لاکھ طبی کارکنان کو ٹیکے لگانے کا آغاز وسط مارچ میں کرنے کی تیاری کر رہی ہے۔ وہ 65 سالہ یا زائد العمر افراد کو اپریل سے ٹیکے لگانے کا آغاز کرنا چاہتی ہے۔