بدھ سے ویکسین لگانے کا آغاز کر دیا جائے گا: جاپانی وزیراعظم سُوگا

جاپان کے وزیر اعظم سُوگا یوشی ہیدے کا کہنا ہے کہ بدھ کے روز سے کورونا ویکسین لگائے جانے کا آغاز ہو گا اور یہ عمل طبی کارکنان سے شروع کیا جائے گا۔

جناب سُوگا پیر کے روز ایوان زیریں کی بجٹ کمیٹی سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت، عوام کو محفوظ اور مؤثر ویکسینوں کی جلد از جلد فراہمی کی بھر پور کوشش کرے گی۔

حکومت نے امریکی ادویہ ساز ادارے فائزر کی تیار کردہ ویکسین کے استعمال کی اجازت اتوار کے روز دے دی ہے۔

حکمران لبرل ڈیموکریٹک پارٹی کے قانون ساز مُورائی ہِدیکی نے کہا کہ ویکسینیشن کے لیے مختلف مقامات دستیاب ہونے چاہیئں تاکہ جس قدر تیزی کے ساتھ ممکن ہو سکے عوام کو ویکسین لگائی جا سکے۔ انہوں نے نشاندہی کی کہ عمر رسیدہ شہریوں کیلئے یہ لازمی نہیں ہونا چاہیے کہ وہ ویکسین کے لیے مختص کردہ مقام پر خود پہنچیں۔ انہوں نے کہا کہ انہیں یہ سہولت ہونی چاہیے کہ وہ طبی مراکز پر بھی ویکسین لگوا سکیں۔

جاپان کے ویکسینیشن پروگرام کے نگران، ضابطہ جاتی اصلاحات کے وزیر کونو تارو نے کہا کہ کئی مقامی حکومتیں ویکسین دینے کے لئے بڑے ویکسینیشن مراکز اور طبی اداروں کو باہم مربوط کرنے کا طریقہ استعمال کرنے کی منصوبہ بندی کر رہی ہیں۔

جناب کونو نے کہا کہ ابتداء میں فائزر، ترسیلات کو الگ الگ کرنے کی تجویز کے خلاف تھی کیونکہ ویکسینوں کو ترسیل اور ذخیرہ کرنے کے دوران منفی 75 ڈگری سیلسیئس پر رکھنے کی ضرورت ہوتی ہے۔ تاہم انہوں نے مزید کہا کہ فائزر کی جانب سے منظوری دے دی گئی ہے لہٰذا وہ چاہتے ہیں کہ مقامی حکومتیں اپنے منصوبوں پر عملدرآمد شروع کر دیں۔