حکومتی پینل کا مزید شدید زلزلوں سے خبردار رہنے پر زور

جاپان کے شمال مشرقی اور دیگر علاقوں کو ہلا دینے والے، ہفتے کی شب آئے شدید زلزلے کے بعد ایک حکومتی کمیٹی نے خبردار کیا ہے کہ آئندہ سات روز تک مزید طاقتور زلزلے آنے کے امکانات ہیں۔

زلزلہ جات پر تحقیق کی کمیٹی نے فُکُوشیما پریفیکچر کے نزدیک سمندر میں آنے والے 7.3 میگنیچیوڈ کے زلزلے کے ایک روز بعد اتوار کو ایک غیرمعمولی اجلاس منعقد کیا۔ میاگی پریفیکچر کی اِشی نوماکی بندرگاہ پر 20 سینٹی میٹر بلند تُسونامی دیکھی گئی۔

کمیٹی کا کہنا ہے کہ وہ علاقے جہاں سنہ 2011 کے شدید زلزلے کے بعد آفٹرشاکس مرتکز رہے تھے، وہاں طاقتور میگنیچیوڈ والے مزید زلزلے آ سکتے ہیں، جن سے تسونامی کا خطرہ ہو سکتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایسے زلزلوں کا امکان طویل عرصے بعد تک ہو سکتا ہے۔

مذکورہ کمیٹی کے سربراہ ہیراتا ناؤشی نے بتایا کہ اگر ہفتے کے روز کا زلزلہ زیادہ میگنیچیوڈ کے ساتھ کم گہرائی میں آتا تو اس سے بڑی تسُونامی آ سکتی تھی۔

انہوں نے ساحلی علاقوں کے رہائشیوں کو زور دے کر یہ امر یقینی بنانے کو کہا کہ وہ شدید زلزلے اور تسُونامی کے لئے تیار ہیں۔

اختتام ہفتہ پر آنے والے زلزلے نے فُکُوشیما اور میاگی پریفیکچروں کو ہلا کر رکھ دیا تھا۔ بعض بلدیات میں زلزلے کی شدت، صفر سے سات کے جاپانی زلزلہ پیما پر چھ-مثبت ریکارڈ کی گئی۔ زلزلے کے بعد کے جھٹکے مسلسل جاری ہیں۔ اطلاعات کے مطابق 150 سے زائد افراد زخمی ہوئے ہیں۔