کورونا وائرس کے نئے متاثرین کی تعداد کم ہو رہی ہے: عالمی ادارۂ صحت

عالمی ادارۂ صحت کو معلوم ہوا ہے کہ دنیا بھر میں کورونا وائرس انفیکشن کے نئے متاثرین کی تعداد کم ہو رہی ہے۔

ادارے کے ڈائریکٹر جنرل تیدروس ایدھانوم گیبریسس نے کہا ہے کہ لگتا ہے اس کمی کی وجہ ممالک کی جانب سے صحت سے متعلقہ اقدامات کو زیادہ سختی کے ساتھ نافذ کرنا ہے۔

لیکن جناب گیبریسس نے اطمینان کر لینے سے متعلق خبردار کرتے ہوئے، اِسے وائرس ہی کی طرح خطرناک قرار دیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس وقت کسی ملک کو اقدامات میں نرمی نہیں کرنی چاہیے۔

عالمی ادارۂ صحت کی جانب سے ہفتے کے روز تک مرتب کردہ اعداد و شمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ 4 جنوری سے شروع ہو کر سات روز کے دوران نئے متاثرین کی مجموعی تعداد 5 لاکھ 45 ہزار 658 تھی۔

یہ اب تک کی ریکارڈ بڑی تعداد تھی۔

تاہم، 11 جنوری سے شروع ہوئے اگلے ہفتے میں نئے متاثرین کی تعداد 48 لاکھ 58 ہزار 913 تھی جو کہ اس سے گزشتہ ہفتے کے مقابلے میں تقریباً 4 فیصد کم ہے۔

18 جنوری کے ہفتے میں دنیا بھر میں نئے متاثرین کی تعداد 42 لاکھ 68 ہزار 573 تھی جو کہ ہفتہ وار لحاظ سے تقریباً 12 فیصد کی کمی ہے۔

اگلے دو ہفتوں کے دوران بھی نئے متاثرین کی تعداد میں کمی ہوئی جو نتیجتاً کمی کا مسلسل چوتھا ہفتہ ہے۔

عالمی ادارۂ صحت کے چھ خطّوں میں سے روس سمیت امریکہ اور یورپ میں مسلسل چار ہفتے نئے انفیکشنز میں کمی واقع ہوئی۔

جاپان، چین اور آسٹریلیاء سمیت مغربی بحرالکاہل، افریقہ و مشرقی بحیرۂ روم کے ساتھ واقع ممالک میں نئے متاثرین کی تعداد میں مسلسل تین ہفتے کمی ہوئی ہے۔

انفرادی ممالک میں بھی نئے انفیکشنز کی تعداد میں کمی دیکھنے میں آئی۔ امریکہ جہاں انفیکشنز کی تعداد دنیا بھر میں سب سے زیادہ ہے، بھارت جو کہ متاثرین کی مجموعی تعداد کے لحاظ دوسرے نمبر پر ہے اور برطانیہ جہاں وائرس کی تبدیل شدہ نئی قِسم کے متاثرین پائے گئے ہیں، وہاں انفیکشن میں کچھ کمی دیکھی گئی ہے۔

پہلی فروری کے ہفتے میں اموات کی تعداد 90 ہزار 45 تھی جس سے تقریباً 9 فیصد کمی ظاہر ہو رہی ہے۔