کورونا وائرس کے آغاز کے بارے میں تمام مفروضات برقرار ہیں: عالمی ادارہ صحت

عالمی ادارہٴ صحت کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے آغاز کے بارے میں چھان بین کے لیے چینی شہر وُوہان بھیجی گئی ماہرین کی ٹیم کو توقع ہے کہ وہ آئندہ ہفتے ایک مختصر رپورٹ جاری کر دے گی۔

ادارے کے سربراہ ٹیڈروس ادہانم گیبریسس نے مزید کہا کہ تمام مفروضات بدستور قائم ہیں اور مزید جائزوں اور چھان بین کی ضرورت ہے۔

وہ وُوہان جانے والی ٹیم کے سربراہ پیٹر بین ایمبارک کے ہمراہ جمعہ کے روز ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔

جناب ایمبارک نے کہا کہ دسمبر 2019 میں وبا کے ابتدائی دنوں میں جو کچھ ہوا، اسکے بارے میں انہیں اب کہیں بہتر آگاہی حاصل ہے۔ لیکن انہوں نے ساتھ ہی یہ بھی کہا کہ وہ اب بھی کورونا وائرس کے منبع کا سراغ لگانے سے کوسوں دور ہیں۔

ماہرین نے 29 جنوری سے 10 فروری تک وُوہان کا دورہ کیا۔ انہوں نے سمندری خوراک کی ایک مارکیٹ کی چھان بین کی جس کے بارے میں باور کیا جاتا ہے کہ وہ وبا کا نقطہٴ آغاز تھی۔

ٹیم نے وُوہان انسٹی ٹیوٹ آف وائرولوجی کا دورہ بھی کیا۔ یہ ادارہ چمگادڑوں میں کورونا وائرسوں پر تحقیق کے لیے معروف ہے۔

سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ نے دعویٰ کیا تھا کہ وائرس ممکنہ طور پر اسی ادارے سے باہر نکلا۔