کورونا وائرس کی 3 نئی اقسام پھیل رہی ہیں: عالمی ادارہ صحت

عالمی ادارہ صحت ’ڈبلیو ایچ او‘ کے مطابق دنیا میں کورونا وائرس کی 3 تبدیل شدہ اقسام پھیل رہی ہیں اور اسکیپ میوٹیشن نامی عمل کی شناخت ہوئی ہے جو وائرس کے خلاف ویکسین کو کم مؤثر کر سکتا ہے۔

عالمی ادارے کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ وائرس کی تبدیل شدہ قسم جو پہلے برطانیہ میں دریافت ہوئی تھی، منگل کے روز تک دنیا کے 83 ممالک اور خطوں میں اس کی تصدیق ہو چکی ہے۔ گزشتہ ہفتے کے مقابلے میں یہ 8 ممالک کا اضافہ ہے۔

پہلی بار جنوبی افریقہ میں دریافت ہونے والی ایک اور تبدیل شدہ قسم کی 37 ممالک و خطوں میں تصدیق ہو چکی ہے، جو ایک ہفتہ قبل کے مقابلے میں 3 زائد ہیں۔

وائرس کی ایک اور تبدیل شدہ قسم جو ابتدا میں برازیل اور جاپان میں دریافت ہوئی تھی، وہ بھی اب 14 ممالک و خطوں میں پھیل چکی ہے۔ یہ ایک ہفتے قبل کے مقابلے میں 4 ممالک کا اضافہ ہے۔

رپورٹ کے مطابق، جنوبی افریقہ اور برازیل والی نئی اقسام میں پہلے پائی جانے والی تبدیلیاں، اب برطانوی قسم میں بھی پائی گئی ہیں۔ ایک سے دوسری نئی قسم میں پھیل جانے والے ’اسکیپ میوٹیشن‘ نامی اس عمل کے نتیجے میں اینٹی باڈی کی افادیت کم ہو سکتی ہے۔

ڈبلیو ایچ او نے کہا ہے کہ ادارہ تبدیل شدہ اقسام پر ویکسین کے مؤثر ہونے کی جانچ کو جاری رکھے گا۔ ادارے نے انفیکشن کی روک تھام کے سخت اقدامات کی ضرورت پر زور دیا۔