دو امریکی طیارہ بردار بحری بیڑوں کی بحیرہ جنوبی چین میں مشقیں

امریکی بحریہ نے بتایا ہے کہ اس کے دو طیارہ بردار بحری بیڑوں نے بحیرہ جنوبی چین میں مشترکہ مشقیں کی ہیں۔

امریکہ کے ساتویں بحری بیڑے کے اعلان کے مطابق، منگل کے روز کی گئی مشقوں میں، تھیوڈور روزویلٹ اور نمٹز طیارہ بردار حملہ آور بیڑوں کے طیاروں اور بحری جہازوں نے حصہ لیا۔

اس کے مطابق مشقوں کا ہدف، ساز و سامان اور کمانڈ و کنٹرول کی صلاحیتوں کو مشترکہ طور پر استعمال کرنے کی صلاحیت میں اضافہ تھا۔

تھیوڈور روزویلٹ بیڑے کے کمانڈر ریئر ایڈمرل ڈگ ورِسّمو نے کہا کہ اس طرح کی کارروائیوں سے ہم خطے میں اپنے شراکتداروں اور اتحادیوں پر مسلسل یہ واضح کرنا چاہتے ہیں کہ ہم آزاد اور کھلے ہند بحرالکاہل خطے کے فروغ کے لیے پر عزم ہیں۔

امریکہ نے اس سے قبل آخری بار دو بحری بیڑے استعمال کرتے ہوئے، بحیرہ جنوبی چین میں جولائی 2020 میں مشقیں کی تھیں۔ جو بائیڈن کے امریکہ کا صدر بننے کے بعد، منگل کی مشقیں پہلی بار تھیں۔

جناب بائیڈن، اپنے پیشرو سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اس مؤقف پر قائم ہیں کہ بحیرہ جنوبی چین میں، چین کی بحری ملکیت کے دعوے غیر قانونی ہیں۔

گزشتہ ہفتے بائیڈن حکومت نے بحیرہ جنوبی چین کے اُن حصوں میں ’آزادانہ نقل و حرکت‘ کی کارروائی کی تھی، جن پر چین کا ملکیتی دعویٰ ہے۔