کورونا وائرس سے متعلق سب سے پہلے خبردار کرنے والے چینی ڈاکٹر کی موت کو ایک سال

اتوار کے روز چین کے اُس ڈاکٹر کی موت کو پورا ایک سال ہو گیا جس نے کورونا وائرس پھوٹ پڑنے کے ابتدائی مراحل میں اس وباء کے خطرے سے متعلق خبردار کرنے کی کوشش کی تھی۔

34 سالہ ڈاکٹر لی وین لیانگ، وُوہان شہر کے ایک ہسپتال میں کام کرنے والے ماہر امراض چشم تھے۔

جناب لی نے شہر میں نمونیا کے متعدد کیسز سے متعلق دسمبر 2019 میں ایک آن لائن گروپ میں خبردار کیا تھا۔ حکام نے جناب لی پر غلط اطلاعات پھیلانے کا الزام عائد کرتے ہوئے ان کی سرزنش کی تھی۔ بعد ازاں، وہ خود وائرس کا شکار ہو کر گزشتہ سال 7 فروری کو وفات پا گئے تھے۔

چینی ذرائع ابلاغ نے ڈاکٹر لی کی پہلی برسی کے موقع پر ان کے کارناموں کے بارے میں کچھ زیادہ نہیں بتایا۔

وُوہان شہر میں کورونا وائرس پر قابو پانے سے متعلق ایک نمائش کا گزشتہ ماہ کے اواخر تک انعقاد ہوا تھا جس میں جناب لی کو اُن لوگوں میں شامل کیا گیا تھا جنہوں نے وائرس کے خلاف بہادری سے لڑتے ہوئے اپنی جان قربان کی۔ تصویر کے ساتھ ان کے پس منظر سے متعلق معمولی سی معلومات تھیں اور اس بات کا کوئی ذکر نہیں تھا کہ انہوں نے کورونا وائرس کی وباء سے متعلق فوری خبردار کرنے کی کوششیں کی تھیں۔

تاہم، نمائش گاہ میں صدر شی جن پنگ کی قیادت کے بارے میں معلومات نمایاں طور پر مشتہر کی گئی تھیں۔