روس کی جانب سے زیر انتظام جزائر پر کورونا وائرس ویکسینیشن کو فروغ

روس کُوناشیری اور شِکوتان جزائر پر کورونا وائرس ویکسینیشن کو فروغ دے رہا ہے۔ یہ جزائر روس کے زیر انتظام ہیں۔ جاپان ان پر ملکیتی دعویٰ رکھتا ہے۔

ان جزائر پر موجود طبی حکام کے مطابق دونوں جزائر کی لگ بھگ 12 ہزار کی مجموعی آبادی میں سے 2 سو سے زائد افراد وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔

سخالین کی علاقائی حکومت کے دسمبر میں شروع کردہ منصوبے کے تحت رہائشیوں کو روس کی بنی ویکسین دینے کے لیے انہیں مخصوص کروائے گئے وقت پر ہسپتالوں میں روزانہ قبول کیا جا رہا ہے۔

کُوناشیری جزیرے پر واقع ایک کلینک کے ڈائریکٹر نے بتایا ہے کہ دونوں جزائر کے تقریباً 270 رہائشیوں کو ویکسین کی پہلی خوراک مل چکی ہے۔

ڈائریکٹر نے دور افتادہ جزائر کے عوام کے لیے ویکسین کے ٹیکے لگانے کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ویکسینیشن کا آغاز مرکزی سرزمینِ روس کے عین ساتھ یا پھر اس سے کچھ عرصہ پہلے ہوا ہے۔

علاقائی حکومت نے کُوناشیری جزیرے پر سی ٹی اسکین کرنے کا ساز و سامان اور خون میں آکسیجن کی سطح کی پیمائش کے آلات نصب کر رکھے ہیں۔ اس کا سنہ 2023 میں ایک نیا ہسپتال تعمیر کرنے کا بھی منصوبہ ہے۔

ان دورافتادہ جزائر پر طبی نظاموں کو بہتر بنانا، صدر ولادیمیر پیوٹن کی حکومت کے ان جزائر پر آبادی میں اضافے کے منصوبے کا جُزو ہے۔

چار جزائر پر مشتمل یہ شمالی علاقہ جات روس کے زیر انتظام ہیں۔ جاپان ان پر ملکیتی دعویٰ رکھتا ہے۔ جاپانی حکومت کا کہنا ہے کہ دوسری جنگ عظیم کے بعد ان جزائر پر غیر قانونی قبضہ کیا گیا۔