عالمی ادارہ صحت، افریقہ کے لیے ویکسین کے حصول میں جاپانی مدد کا خواہاں

عالمی ادارہ صحت کے علاقائی دفتر برائے افریقہ کی سربراہ نے توقع ظاہر کی ہے کہ نادار افریقی ممالک کے لیے کورونا وائرس کی ویکسین کے حصول کے سلسلے میں جاپان کا عالمی اثر و رسوخ مددگار ہو سکتا ہے۔

کئی افریقی ملک ابھی تک ویکسین کی فراہمی محفوظ نہیں کروا پائے جبکہ ترقی یافتہ ممالک میں پہلے ہی ویکسین لگائے جانے کا آغاز ہو چکا ہے۔

عالمی ادارہ صحت میں علاقائی ڈائریکٹر برائے افریقہ، ماتشی دیسو موئیتی نے این ایچ کے کو انٹرویو دیتے ہوئے صورتحال کو ’’انتہائی قابل افسوس اور عالمی یکجہتی کی روح کے خلاف‘‘ قرار دیا ہے۔

محترمہ موئیتی نے کہا کہ بعض ملکوں نے ادویہ ساز کمپنیوں کے ساتھ پیشگی معاہدوں کے ذریعے اپنی آبادی سے کئی گنا زیادہ افراد کو دیے جانے کے لیے کافی مقدار میں ویکسین حاصل کر لی ہے۔

محترمہ موئیتی نے زور دے کر کہا کہ عالمی تجارت اور اقتصادی پیشرفت کا چولی دامن کا ساتھ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر متمول ممالک اپنی سرحدیں بند کر لیں تو بھی وہ اس امر کی ضمانت نہیں دے سکتے کہ وہ پسماندہ ملکوں کے لوگوں سے نہیں ملیں گے۔

انہوں نے اس یقین کا اظہار کیا کہ جاپان اپنے پاس موجود ویکسین میں سے کچھ ممکنہ طور پر عطیہ کرتے ہوئے دیگر متمول ملکوں پر اثر انداز ہو سکتا ہے۔