جاپان میں غیر ملکی کارکنان کی تعداد ریکارڈ بلند

جاپان کی وزارت محنت نے بتایا ہے کہ ملک میں رجسٹرڈ غیر ملکی کارکنان کی تعداد ریکارڈ بلند ہو چکی ہے۔

آجروں کے مطابق گزشتہ سال اکتوبر میں یہ تعداد 17 لاکھ 20 ہزار تھی۔ یہ ایک سال قبل کے مقابلے میں 4 فیصد کا اضافہ ہے، تاہم اضافے کی شرح میں 9.6 فیصد پوائنٹس کی کمی آئی ہے۔

قومیت کے لحاظ سے دیکھا جائے تو ویتنامی کارکنان کی تعداد سب سے زیادہ 4 لاکھ 44 ہزار تھی۔ دوسرے نمبر پر چینی تھے جن کی تعداد 4 لاکھ 20 ہزار تھی۔ اس کے بعد فلپائنی کارکنوں کا نمبر تھا جو ایک لاکھ 85 ہزار کی تعداد میں تھے۔ اس فہرست میں ویتنامی کارکنان پہلی بار اول نمبر پر آئے ہیں۔

طبی دیکھ بھال کے شعبے نے سب سے زیادہ رفتار سے غیر ملکی کارکنوں کو قبول کیا۔ اکتوبر 2019 کے مقابلے میں ان کی تعداد میں 26.8 فیصد اضافہ ہوا۔ دوسرے نمبر پر تعمیراتی شعبہ رہا، جس میں 19 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

تاہم، ہوٹلوں اور ریستورانوں میں ملازمت پانے والے غیر ملکی کارکنان کی تعداد میں 1.8 فیصد کمی ہوئی۔ سنہ 2007 میں حکومت کی جانب سے آجروں کو غیر ملکی ملازمین کی تعداد کی اطلاع دینے کا پابند کیے جانے کے بعد سے، اس شعبے میں پہلی بار ان کی تعداد میں کمی آئی ہے۔

وزارت کے مطابق، ان اعداد و شمار سے معلوم ہوتا ہے کہ کورونا وائرس وباء کے مختلف شعبوں پر اثرات کس قدر مختلف ہیں۔