آئی ٹی کی بڑی کمپنیوں کو کنٹرول کرنے کے لیے جاپان کا نیا قانون

جاپان میں پیر کے روز سے ایک نیا قانون نافذ ہوا ہے جو ڈیجیٹل پلیٹ فارم مہیا کرنے والی کمپنیوں کو اپنے اثر و رسوخ کے ذریعے کاروباری شراکتداروں کے ساتھ غیر منصفانہ معاہدے کرنے سے روکے گا۔

یہ قانون ای کامرس کی ان کمپنیوں پر لاگو ہوگا جن کی جاپان میں سالانہ فروخت 2 ارب 80 کروڑ ڈالر سے زائد ہے یا ایسے اپلی کیشن اسٹور جن کی آمدنی ایک ارب 90 کروڑ ڈالر سے زائد ہے۔ ایمازون، گوگل، ایپل، یاہُو جاپان، اور راکُوتین، ممکنہ طور پر اس قانون کے دائرے میں آئیں گی۔

نئے قانون کے تحت، بڑی آئی ٹی کمپنیاں اپنے کاروباری شراکتداروں کے ساتھ معاہدوں کی شرائط واضح کرنے اور ان میں کسی تبدیلی کی صورت میں پیشگی نوٹس دینے کی پابند ہوں گی۔

اس پر عملدرآمد نہ کرنے کی صورت میں وزارتِ صنعت انہیں ایسا کرنے کا حکم جاری کر سکے گی۔

کسی کمپنی پر اجارہ داری کے قانون کی خلاف ورزی کرنے کا شبہ ہونے کی صورت میں وزارت، منصفانہ تجارت کے ادارے سے اس کے خلاف کارروائی کا کہہ سکے گی۔