کورونا وائرس کی تبدیل شدہ قسم کے پہلے کلسٹر کی جاپان میں ممکنہ موجودگی

جاپان کے صحت حکام نے خیال ظاہر کیا ہے کہ کورونا وائرس انفیکشن کی برطانیہ میں پھیلنے والی تبدیل شدہ قِسم کا پہلا کلسٹر ٹوکیو کے نزدیک موجود ہے۔

باور کیا جاتا ہے کہ یہ نئی قِسم، وائرس کی پہلے سے موجود قسم سے کہیں زیادہ جلد پھیلتی ہے۔

وزارت صحت کا کہنا ہے کہ سائیتاما پریفیکچر میں 40 سے 60 کے پیٹے کے درمیان کی عمر والے چار افراد کے اس تبدیل شدہ قِسم سے متاثر ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔

ان میں سے تین متاثرین کا ٹوکیو میں رہائش پذیر ایک شخص کے کام کی جگہ اور اس سے پہلے وائرس کی تبدیل شدہ قِسم سے مصدقہ متاثر ہونے والے دیگر لوگوں سے واسطہ پڑا تھا۔

وزارت کی رائے ہے کہ اس تبدیل شدہ قسم کا کلسٹر، کام کی ایک جگہ پر وقوع پذیر ہوا۔ سات دیگر افراد بھی اسی نئی قسم سے متاثر پائے گئے ہیں۔

دریں اثناء، ٹوکیو میں 50 کے پیٹے کے ایک اور شخص کی نئے قسم کے وائرس سے متاثر ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔ وہ برطانیہ نہیں گیا لیکن 50 کے پیٹے کی ایک خاتون سے اس کا قریبی بالمشافہ رابطہ رہا جس کا پہلے ہی نئی قسم کے وائرس کا ٹیسٹ مثبت آیا تھا۔

اب تک 15 ایسے افراد نئی قسم سے متاثر ہوئے ہیں جن کا ماضی قریب میں برطانیہ جانے کا کوئی ریکارڈ نہیں اور برطانیہ کا دورہ کرنے والے نئی قسم سے متاثرہ افراد سے ان کا واسطہ پڑنے کے بارے میں بھی کوئی معلومات سامنے نہیں آئی ہیں۔

وزارت صحت کے حکام کے مطابق وہ یہ نہیں سمجھتے کہ تبدیل شدہ قسم ملک میں وسیع پیمانے پر پھیل رہی ہے لیکن پھر بھی وہ صورتحال کا قریبی جائزہ لیتے رہیں گے۔