ہنگامی حالت کے معاملے پر گورنروں کی ملاقات

جاپان میں وبا کے جاری پھیلاؤ کے تناظر میں ٹوکیو اور اس سے ملحقہ تین پریفیکچروں کے گورنر فی الوقت نافذ شدہ ہنگامی حالت کے مستقبل کے بارے میں غور و خوض کر رہے ہیں۔

ٹوکیو اور دس دیگر پریفیکچروں میں ہنگامی حالت 7 فروری کو ختم ہونا ہے۔

ٹوکیو کی گورنر کوئیکے یُورِیکو نے کہا، ’’ہمیں سخت احتیاطی اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے کیونکہ کورونا وائرس ٹیسٹ کے مثبت نتیجے کے حامل افراد کی تعداد بدستور زیادہ ہے‘‘۔

کاناگاوا پریفیکچر کے گورنر کُروئیوا یُوجی نے کہا، ’’کاناگاوا پریفیکچر میں طبی دیکھ بھال کے نظام پر شدید دباؤ برقرار ہے‘‘۔

صورتحال پر تبادلہ خیال کے لیے گورنروں نے جمعہ کے روز ملاقات کی۔ وہ مرکزی حکومت کے ساتھ اس معاملے پر مشاورت کرنا چاہتے ہیں کہ ہنگامی حالت برقرار رکھنے پر کیسے عملدرآمد کروایا جائے گا۔

انکا کہنا ہے کہ ہنگامی حالت میں توسیع کی صورت میں مشکلات میں گھرے کاروباروں اور بے روزگار ہونے والے افراد کو مزید مالی امداد کی ضرورت ہو گی۔

ہفتے کو سہ پہر 3 بجے تک ٹوکیو سے مزید سات سو 69 افراد کے وائرس سے متاثر ہونے کی اطلاع تھی۔ نئے متاثرین کی یومیہ تعداد کم تو ہو رہی ہے لیکن ماہرین بدستور تشویش کا اظہار کر رہے ہیں۔