اسپین کے وزیر اقتصادیات کا جاپانی سرمایہ کاری پر زور

اسپین کے وزیر اقتصادیات نے جاپان سے قابل تجدید توانائی جیسی ابھرتی ہوئی صنعتوں میں مزید سرمایہ کاری پر زور دیا ہے۔

جناب کارلوس کیورِپو نے گزشتہ ہفتے ٹوکیو میں منعقدہ اقتصادی فورم کے موقع پر این ایچ کے سے بات کی۔

جناب کیورِپو نے کہا کہا اسپین میں مجموعی جاپانی براہ راست سرمایہ کاری پہلے ہی بہت بلند سطح پر ہے لیکن وہ دو طرفہ تعلقات کو وسعت دینا چاہتے ہیں۔

وزیرِ اقتصادیات نے کہا، "آپ جاپان میں قابل تجدید توانائی، ڈیجیٹل، خوراک کی پیداوار کے لیے زراعت جیسے تزویراتی شعبوں میں ہسپانوی کمپنیوں کی موجودگی کو فروغ دینا چاہتے ہیں۔ لیکن ساتھ ہی، ہم جاپان سے سرمایہ کاری کو راغب کرنا چاہتے ہیں۔"

جناب کیورِپو نے کہا کہ اسپین میں تقریباً 60 فیصد بجلی قابل تجدید توانائی کے ذریعے پیدا ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ان کے ملک میں شمسی اور پون توانائی میں جدید تکنیکی مہارت رکھنے والی کمپنیاں کام کر رہی ہیں۔

اسپین کے وزیر اقتصادیات نے "اور ٹورازم" کہلانے والے مسئلے پر بھی بات کی، جس پر جاپان میں بھی تشویش میں اضافہ ہو رہا ہے۔

پچھلے سال، اسپین میں 8 کروڑ 50 لاکھ سے زیادہ غیرملکی سیاح آئے تھے۔ یہ سطح کورونا کی عالمی وبا سے پہلے کی سطح سے بھی زیادہ تھی۔ سیاحتی مقامات پر سیاحوں کی بڑی تعداد مقامی باشندوں کی زندگی پر اثرانداز ہو رہی ہے۔

جناب کیورِپو نے کہا کہ "ہمیں واقعی اس حقیقت کا خیال رکھنا چاہیے کہ یہ عمل پائیدار ہو اور اس کے منفی نتائج کم ہوں"۔

انہوں نے کہا کہ متعدد انتظامی اداروں کے ساتھ تعاون کے ذریعے متوازن حکمت عملی تیار کرنا ضروری ہے۔