جاپان میں شدید گرمی کے باعث دوبارہ ہیٹ اسٹروک الرٹ جاری

جاپانی محکمۂ موسمیات کے حکام عوام کو لُو لگنے سے بچنے کے بارے میں خبردار کر رہے ہیں کیونکہ پیر کے روز بھی انتہائی شدید گرمی پڑی۔

محکمۂ موسمیات کا کہنا ہے کہ بحرالکاہل میں بلند دباؤ والا نظام مغربی اور مشرقی جاپان کے وسیع علاقوں پر چھایا ہونے کی وجہ سے کچھ علاقوں میں درجۂ حرارت تقریباً 40 ڈگری سینٹی گریڈ تک بڑھ گیا۔

پیر کے روز دوپہر ڈھائی بجے واکایاما پریفیکچر کے شِنگُو شہر میں دن کا بلند ترین درجۂ حرارت 39.6 ڈگری سینٹی گریڈ، ٹوکیو کے فُوچُو شہر میں 39.2 ڈگری سینٹی گریڈ اور میئے پریفیکچر کے کُوانا شہر میں 38.8 ڈگری سینٹی گریڈ تک جا پہنچا۔

محکمۂ موسمیات اور وزارتِ ماحولیات نے ٹوکیو سمیت کانتو سے اوکی ناوا تک 24 پریفیکچرز کے لیے ہیٹ اسٹروک الرٹ جاری کیے ہیں۔

لوگوں سے گزارش کی جا رہی ہے کہ وہ ایئر کنڈیشنر کا مناسب استعمال کریں، غیر ضروری طور پر باہر نکلنے سے گریز کریں اور پیاس چاہے نہ ہو پھر بھی پانی پیتے رہیں۔

رواں موسم گرما میں کئی عمر رسیدہ افراد ممکنہ طور پر گرمی لگنے کے باعث ہلاک ہو چکے ہیں۔

خاندانوں کو مشورہ دیا جا رہا ہے کہ وہ معمر افراد اور بچوں کا خاص خیال رکھیں جن کا گرمی سے جلد متاثر ہونے کا خدشہ زیادہ ہوتا ہے۔