کم ال سنگ کی وفات کو 30 سال مکمل ہونے پر، شمالی کوریا کا فوجی طاقت پر زور

شمالی کوریا نے پیر کو ملک کا بانی باور کیے جانے والے کِم اِل سنگ کی وفات کی 30 ویں برسی پر اپنی میزائل اور جوہری صلاحیت پر زور دیا ہے اور جنوبی کوریا کو اس کی حالیہ فوجی مشقوں پر تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

ملک کے موجودہ رہنما کِم جونگ اُن، کِم اِل سنگ کے پوتے ہیں۔

حکمران ورکرز پارٹی کے اخبار رودونگ سِنمُن نے اپنے صفحہ اول پر آنجہانی بانی کی ایک بڑی تصویر چھاپی۔ اخبار نے نوجوان کم سے وفاداری کا مطالبہ کیا، جو اپنے والد اور دادا کی جگہ شمالی کوریا کے رہنما بنے ہیں۔

اس میں ICBM درجے کے Hwasong-18 میزائل کی تصویر بھی تھی۔

اخبار نے کِم جونگ اُن کی زیر قیادت جوہری اور میزائل ترقیاتی پروگراموں کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا کہ ملک دنیا کی سب سے مضبوط طاقت بن گیا ہے جسے کوئی چھو نہیں سکتا۔

رودونگ سِنمُن نے کِم جونگ اُن کی چھوٹی بہن کِم یو جونگ کا ایک بیان بھی شائع کیا۔

کِم یو جونگ نے گزشتہ ماہ جنوبی کوریا کی جانب سے زمینی اور سمندری سرحدوں کے قریب لائیو فائر آرٹلری مشقوں کے دوبارہ شروع ہونے کو "صورتحال کو مزید خراب کرنے والی واضح اشتعال انگیزی" کہتے ہوئے اس پر تنقید کی۔

انہوں نے جون میں امریکہ، جاپان اور جنوبی کوریا کی فریڈم ایج مشترکہ مشقوں پر بھی تنقید کی، جس سے پیانگ یانگ کا محاذ آرائی کا موقف واضح ہو گیا۔

ان کے بیان کے مطابق، اگر اس بات کا تعین ہو جاتا ہے کہ ان مشقوں نے شمالی کوریا کی خودمختاری کی خلاف ورزی کی ہے اور جنگ کے اعلان کے مترادف ایک عمل کا ارتکاب کیا ہے تو، "ہماری مسلح افواج فوری طور پر ملکی آئین کے ذریعہ تفویض کردہ اپنے مشن اور فرض کو انجام دیں گی"۔