زیلنسکی کو نیٹو رہنماؤں سے یوکرین کے لیے مزید امداد کی توقع

یوکرین کے صدر وولودیمیر زیلنسکی نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ نیٹو رہنما ان کے ملک کی امداد کو بڑھانے پر رضامند ہو جائیں گے کیونکہ روسی افواج مشرقی یوکرین میں اپنی جارحیت بڑھا رہی ہیں۔

نیٹو کا سربراہ اجلاس واشنگٹن میں منگل کے روز سے شروع ہو گا۔

صدر زیلنسکی نے ہفتے کے روز ایک سوشل میڈیا پوسٹ میں کہا "اپنے تمام شہروں اور دیہاتوں کی حفاظت کے لیے، اور روسی دہشت گردی پر حقیقی معنوں میں قابو پانے کے لیے، ہمیں مزید ٹھوس فیصلوں کی ضرورت ہے۔ ہم ایسے فیصلوں کے لیے آئندہ ہفتے اپنے شراکت داروں کے ساتھ مل کر کام کریں گے"۔

دریں اثناء روسی وزارت دفاع نے اتوار کے روز ایک بیان میں کہا کہ اس کی افواج نے مشرقی یوکرین کے علاقے دونیتسک کے ایک گاؤں کا کنٹرول سنبھال لیا ہے۔ اس نے یہ بھی کہا کہ فعال کارروائیوں کے نتیجے میں فورسز نے اپنی تزویراتی پوزیشن کو بہتر بنایا ہے۔

یوکرین کی افواج نے اعلان کیا کہ انہوں نے دونیتسک کے علاقے پوکرووسک محاذ پر روس کے ایس یو 25 طیارے کو مار گرایا ہے۔

توجہ اس بات پر مرکوز ہے کہ نیٹو رہنما کتنی مدد کی پیشکش کر سکیں گے جب کہ زیلنسکی طویل فاصلے تک مار کرنے والے میزائلوں کے حصول اور فضائی دفاعی نظام کو بڑھانے میں مدد کی ضرورت پر زور دے رہے ہیں۔