ہنگری کے وزیراعظم کی پوٹن سے ملاقات

ہنگری کے وزیراعظم وکٹر اوربان نے ماسکو میں روسی صدر ولادیمیر پوٹن سے ملاقات کی جو یوکرین میں جنگ بندی کے لیے انکی کوششوں کا حصہ تھی۔ جمعے کو ہونے والی یہ ملاقات اوربان کے کیف کے دورے کے چند دن بعد ہوئی۔ ہنگری کے پاس یورپی یونین کی گردشی صدارت ہے، اور ان کے اس دورے پر تنقید ہو رہی ہے۔

اوربان کو پوٹن کے قریبی اتحادی کے طور پر جانا جاتا ہے۔ دونوں نے یوکرین میں لڑائی سمیت مختلف عالمی مسائل پر بات چیت کے لیے ملاقات کی۔

پوٹن نے کہا، "روس، تنازعے کے مکمل اور حتمی خاتمے کے لیے تیار ہے"۔ تاہم، انہوں نے مزید کہا کہ لڑائی صرف اسی صورت میں رکے گی جب یوکرین کی فوجیں ان چار علاقوں سے نکل جائیں جن کا روس نے الحاق کر لیا ہے۔

اوربان نے کہا کہ دونوں فریق ایک دوسرے سے بہت دور ہیں لیکن وہ پرامن حل کے لیے جو کچھ کر سکتے ہیں کریں گے۔ ان کا کہنا تھا، "جنگ کے خاتمے کے لیے بہت سے اقدامات کی ضرورت ہے لیکن ہم مذاکرات کی بحالی کے لیے پہلا اہم قدم اٹھانے میں کامیاب ہوئے اور میں اس سلسلے میں کام کرتا رہوں گا"۔

کیف میں رہنماؤں نے اوربان کے دورے پر تنقید کی اور اپنے اس دعوے کو دہرایا کہ "یوکرین کے بغیر یوکرین پر کوئی معاہدہ نہیں ہو سکتا"۔

یورپ کے حکام نے بھی اس دورے کی مذمت کی ہے۔ یورپی کونسل کے صدر چارلس مشیل نے X پر پوسٹ کیا، "EU کی گردش کرنے والی صدارت کے پاس یورپی یونین کی جانب سے روس کے ساتھ مزاکرات کا کوئی اختیار نہیں ہے"۔