اوکینوتوریشیما کے پار سمندر میں چینی فلوٹ کی تنصیب پر جاپان کا اظہار افسوس

جاپانی حکومت کا کہنا ہے کہ چین نے جون میں جاپان کے سب سے جنوبی جزیرے سے پرے ایک بحری فلوٹ نصب کیا۔ یہ علاقہ کھلا سمندر تصور کیا جاتا ہے لیکن یہ جاپان کی وسیع تر بحری حدود کے اندر ہے۔

چیف کابینہ سیکریٹری ہایاشی یوشی ماسا نے جمعہ کے روز کہا کہ یہ افسوسناک ہے کہ چین نے اپنے مقصد، منصوبے یا دیگر تفصیلات کی وضاحت کیے بغیر فلوٹ نصب کیا۔

حکومت کا کہنا ہے کہ چین کے ایک سمندری تحقیقی بحری جہاز نے گزشتہ ماہ بحرالکاہل میں مغربی مرکزی جزیرے شیکوکُو کے جنوب اور اوکینوتوریشیما کے جنوبی جزیرے کے قریب واقع ایک علاقے میں فلوٹ نصب کیا تھا۔

اس کا کہنا ہے کہ جاپان نے چینی بحری جہاز کی نقل و حرکت پر نظر رکھی اور چین سے کہا کہ وہ وسیع تر بحری حدود کے اندر واقع کھلے سمندروں میں بھی جاپان کے سمندری مفادات کی خلاف ورزی نہ کرے۔

حکومت کا کہنا ہے کہ اس نے چین سے اُسکی سرگرمیوں کے مقصد اور دیگر تفصیلات کی وضاحت بھی مانگی، لیکن فلوٹ بغیر کسی وضاحت کے نصب کر دیا گیا۔

جناب ہایاشی نے بتایا کہ جاپان نے بیجنگ سے کہا ہے کہ وہ اپنی وضاحت اور سرگرمیوں دونوں میں شفافیت کا مظاہرہ کرے کیونکہ چین کی سمندری سرگرمیوں پر کئی طرح کے خدشات اور شکوک و شبہات کا اظہار کیا جاتا رہا ہے۔