جاپان اور فلپائن کا چاول کی کاشت سے متعلق کاربن کریڈٹ کا اشتراک

جاپان اور فلپائن نے جاپانی ٹیکنالوجی کے استعمال کے ذریعے فلپائن میں چاول کی فصلوں سے میتھین کا اخراج کم کرنے کے ذریعے کاربن کریڈٹ کے اشتراک پر اتفاق کیا ہے۔

جاپان کی وزارت زراعت نے جمعہ کے روز کہا کہ اس نے فلپائن کے ساتھ اس منصوبے کی تفصیلات پر اتفاق کیا ہے۔

وزارت نے کہا ہے کہ میتھین پیدا کرنے والے بیکٹیریا کو کم فعال کرنے کے لیے جاپان، دھان کے کھیتوں سے پانی باقاعدگی سے نکالنے اور مٹی میں آکسیجن پہنچانے والی ٹیکنالوجی فراہم کرے گا۔

دنیا میں کھیتی باڑی سے جنم لینے والی گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج کا 48 فیصد حصہ دھان کے کھیتوں کا ہے جسکا زیادہ تر ذمہ دار میتھین کو ٹھہرایا جاتا ہے۔

پہلے گیلا اور پھر خشک کرنے والی اس تکنیک سے میتھین کے اخراج میں 35 فیصد کمی کی توقع ہے، جبکہ فصل کی پیداوار میں 20 فیصد سے زیادہ اضافہ ہو گا۔

جاپان اور فلپائن مشترکہ کریڈٹنگ میکانزم نامی فریم ورک کے تحت اخراج میں کٹوتیوں سے ملنے والا کریڈٹ آپس میں تقسیم کریں گے۔

جاپان پہلے ہی دو طرفہ کریڈٹ شیئرنگ سسٹم کے تحت شراکت دار ممالک کو قابل تجدید توانائی کی ٹیکنالوجی فراہم کر رہا ہے۔

لیکن وزارت زراعت کا کہنا ہے کہ فلپائن کے ساتھ یہ منصوبہ کاشتکاری کے شعبے میں پہلا منصوبہ ہو گا۔ اس کا کہنا ہے کہ وہ ویتنام کو اسی طرح کی ٹیکنالوجی فراہم کرنے کی امید رکھتی ہے۔