جاپانی ادویات ساز کی ممکنہ طور پر 'بینی کوجی' سپلیمنٹ سے منسلک 76 اموات کی تحقیقات

معلوم ہوا ہے کہ جاپانی دوا ساز کمپنی کوبایاشی فارماسیوٹیکل، 76 اموات اور اپنے اس سپلیمنٹ کے درمیان ممکنہ تعلق کی تحقیقات کر رہی ہے جس میں "بینی کوجی" والے چاول کے اجزاء شامل ہیں۔

جاپان بھر سے ایسی متعدد رپورٹس سامنے آئی ہیں کہ اس کمپنی کا سپلیمنٹ استعمال کرنے والے لوگوں میں گردے کی بیماری اور صحت کے دیگر مسائل پیدا ہوئے۔

دوا ساز کمپنی نے حال ہی میں وزارت صحت کو اطلاع دی کہ اسے سوگوار خاندانوں سے 170 کالیں موصول ہوئی تھیں۔

کمپنی نے کہا کہ وہ ان میں سے 76 کیسوں کی جانچ کر رہی ہے تاکہ اس بات کا پتہ چلایا جا سکے کہ آیا ان افراد نے سپلیمنٹ استعمال کیا۔ وہ ان کی طبی تشخیص کا بھی جائزہ لے رہی ہے۔

کمپنی نے وضاحت کی ہے کہ پہلے انکشاف کردہ پانچ اموات میں سے ایک کیس میں سپلیمنٹ کا استعمال شامل نہیں تھا۔

وزارت نے کوبایاشی فارماسیوٹیکل کو طبی اداروں سے ہدایات لینے اور تجزیہ سمیت تحقیقاتی عمل کے بارے میں ہدایت دی ہے۔ وزارت، پیشرفت پر نظر رکھے گی۔

وزیر صحت تاکےمی کیزو نے نشاندہی کی کہ کوبایاشی فارماسیوٹیکل نے موت کے معاملات کی اطلاع اُس وقت دی جب وزارت نے اسے معلومات فراہم کرنے کو کہا۔

تاکےمی نے زور دے کر کہا کہ صورتحال انتہائی افسوسناک ہے اور یہ کہ وزارت اس میں براہ راست دخل اندازی کرے گی کیونکہ وہ اب اس معاملے کو صرف کمپنی پر نہیں چھوڑ سکتی۔