کوہ پیمائی کے راستے کھلنے سے پہلے ہی ماؤنٹ فُوجی پر چار ہلاکتیں

جاپان میں حکام نے لوگوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ ماؤنٹ فُوجی پر جانے سے اُس وقت تک گریز کریں جب تک یہ عمل محفوظ نہ ہو۔ کوہ پیمائی کے ٹریلز یعنی راستے ابھی تک بند ہیں لیکن 4 کوہ پیما ہلاک ہو چکے ہیں۔

اتوار کی صبح پولیس کو ٹوکیو کی ایک خاتون رہائشی کی ٹیلی فون کال موصول ہوئی۔ اُس کا 53 سالہ شوہر کوہِ فُوجی پر چڑھنے کے لیے گیا تھا جس کے بعد اُس سے رابطہ نہیں ہو رہا تھا۔

کارروائی کے لیے پولیس مذکورہ شخص کی تلاش میں گئی۔ آتش فشاں پہاڑ کی چوٹی کے جنوبی جانب، دہانے کے قریب تین افراد ملے جن کی حرکت قلب بند تھی۔

تینوں کوہ پیما الگ الگ، مختلف مقامات پر پائے گئے۔ پولیس ان کی شناخت کرنے اور یہ دریافت کرنے کے لیے کام کر رہی ہے کہ وہ کیسے ہلاک ہوئے۔

پہاڑ کی شمال کی جانب ایک 38 سالہ شخص گر کر بے ہوش ہو گیا۔ اسے ہسپتال لے جایا گیا اور وہاں اس کی موت کی تصدیق ہوئی۔

یاماناشی پریفیکچر کا ایک اور شیزُواوکا پریفیکچر کے تین راستے جولائی تک کوہ پیمائی کے لیے نہیں کھلتے۔ لیکن اس کے باوجود لوگ کوہ پیمائی سے باز نہیں آتے۔

سال کے اِس حصے کے بعض ایام میں چوٹی پر رات کے وقت کا درجہ حرارت نقطہ انجماد سے کم ہو جاتا ہے اور کئی مقامات پر برف بھی موجود ہوتی ہے۔