چین میں جاپانی اسکولوں نے سُوژو میں حملے کے بعد حفاظتی اقدامات سخت کر دیے

مشرقی چین کے شہر سُوژو میں جاپانی اسکول کے بچّوں کو لے جانے والی ایک بس پر حملے کے بعد، چین میں جاپانی اسکولوں نے اپنے سلامتی اقدامات سخت کر دیے ہیں۔

شنگھائی میں جاپانی قونصل خانے کا کہنا ہے کہ ایک شخص نے جو بظاہر چاقو سے مسلح تھا، پیر کے روز اُس وقت حملہ کیا جب اسکول بس ایک اسٹاپ پر پہنچی۔

اُس کا کہنا ہے کہ مذکورہ بس سُوژو میں جاپانی اسکول سے طلباء کو گھر لے کر جا رہی تھی۔

قونصل خانے کے حکام کا کہنا ہے کہ حملے میں ایک جاپانی ماں اور اُن کا بچہ زخمی ہوئے۔ حکام کے مطابق، بس کے ایک چینی اہلکار کو چاقو مارا گیا اور اُس کی حالت تشویشناک ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ حملہ آور چینی شہری ہے، جسے مبینہ طور پر حراست میں لے لیا گیا ہے اور اُس سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے، لیکن اُس کا مقصد ابھی تک واضح نہیں ہو سکا ہے۔