پارلیمانی اجلاس کے اختتام پر کشیدا کا مزید سیاسی اصلاحات کا عزم

جاپان کے قانون سازوں نے مرکزی حکمران لبرل ڈیموکریٹک پارٹی (ایل ڈی پی) سے متعلق مہینوں سے جاری رقم کے اسکینڈل کے پس منظر میں تازہ ترین عمومی پارلیمانی اجلاس مکمل کر لیا ہے۔

ایل ڈی پی کے کچھ ارکان پر سیاسی فنڈ کی رپورٹس میں غلط بیانی کا الزام ہے۔

پارلیمان نے اس ہفتے کے شروع میں پولیٹیکل فنڈز کنٹرول قانون پر نظر ثانی کا ایک قانون منظور کیا۔ نئے قوانین کے تحت قانون سازوں کو اپنی رپورٹس کے مندرجات کی تصدیق کرنا ہو گی۔ اس اقدام کا مقصد زیادہ شفافیت ہے۔

جمعہ کو خطاب کرتے ہوئے، وزیر اعظم کشیدا فومیو نے کہا کہ وہ "جمہوریت کے تحفظ" کے لیے اصلاحات پر کام جاری رکھیں گے۔

کشیدا نے یہ بھی کہا کہ حکومت کا مقصد پالیسی سرگرمیوں کے فنڈز کی نگرانی کے لیے فریق ثالث کا ادارہ قائم کرنا ہے۔

لیکن وزیراعظم نے اس بارے میں کچھ کہنے سے انکار کر دیا کہ آیا وہ قبل از وقت انتخابات کے مطالبات کو مد نظر رکھتے ہوئے ایوان زیریں تحلیل کر دیں گے۔

حزب اختلاف کی سب سے بڑی جماعت کے رہنما نے کشیدا کے جواب پر تنقید کی۔ کانسٹی ٹیُوشنل ڈیموکریٹک پارٹی کے صدر اِیزُومی کینتا نے یہ بھی کہا کہ وہ حکومت کو چیلنج کرنے کے لیے دیگر اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ مل کر کام کرنے کی امید رکھتے ہیں۔