جاپانی پارلیمان میں نظر ثانی شدہ سیاسی فنڈنگ کنٹرول بل کی منظوری

جاپانی پارلیمان دائت نے سیاسی فنڈز کنٹرول کے قانون پر نظر ثانی کے لیے ایک بل منظور کیا ہے۔

اس بل کو ایوان بالا کے مکمل اجلاس نے بدھ کے روز کثرت رائے سے منظور کیا۔ حکمراں اتحاد کی سب سے بڑی جماعت لبرل ڈیموکریٹک پارٹی، اُس کی شراکت دار کومئیتو اور دیگر نے اس بل کی حمایت کی۔

حزب اختلاف کی جماعتوں نے مخالفت میں ووٹ دیا۔ اس میں جاپان اِنوویشن پارٹی بھی شامل ہے جس نے ایوان زیریں میں بل کے حق میں ووٹ دیا تھا۔

منظور شدہ اِس قانون کے تحت قانون سازوں کے لیے لازم ہے کہ وہ ایک دستاویز میں اپنے سیاسی فنڈز کی رپورٹ کے مندرجات کی تصدیق کریں۔ اس کا مقصد ’’جرم بوجہ تعلق‘‘ کا نظام متعارف کروانا ہے۔

فنڈ ریزنگ ٹکٹ خریدنے والوں کے نام ظاہر کرنے کے لیے درکار کم سے کم رقم کی حد کو کم کرکے 50 ہزار ین یا تقریباً 320 ڈالر کردیا جائے گا۔ اِس وقت کم سے کم رقم کی حد دو لاکھ ین یا تقریباً 12 سو 80 ڈالر ہے۔

قانون سازوں سے پوچھا جائے گا کہ وہ بتائیں کہ ان کی پارٹی کی طرف سے فراہم کردہ پالیسی سرگرمی فنڈز کو کب اور کیسے استعمال کیا گیا۔ انہیں دس سال بعد تک رسیدوں اور دیگر متعلقہ دستاویزات منظر عام پر لانے کی ضرورت ہوگی۔