بائیڈن اور میکرون یوکرین کی مدد کے لیے روسی اثاثوں کے طریقہ استعمال پر متفق

امریکی صدر جو بائیڈن کا کہنا ہے کہ وہ فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون کے ساتھ ایک اتفاق رائے پر پہنچ گئے ہیں کہ منجمد روسی اثاثوں سے حاصل ہونے والے منافع کو یوکرین کی مدد کے لیے کس طرح استعمال کیا جائے۔

اتوار کے روز ایک رپورٹر کے پوچھے جانے پر کہ کیا انہوں نے میکرون کے ساتھ اس مسئلے پر بات کی ہے اور اتفاق رائے ہوا ہے، بائیڈن نے جواب دیا "ہاں، اور ہاں"۔

لیکن بائیڈن نے، جو فرانس میں تھے، تفصیلات ظاہر نہیں کیں۔

گروپ آف سیون ممالک، روس کے مرکزی بینک کے منجمد اثاثوں سے حاصل ہونے والے منافع کو یوکرین کی مدد کے لیے استعمال کرنے پر غور کر رہے ہیں۔ ان اثاثوں کو یوکرین پر حملے کے باعث روس پر پابندیاں لگانے کے لیے غیر فعال کر دیا گیا تھا۔

امریکہ کا اندازہ ہے کہ منجمد اثاثوں سے سالانہ 3 سے 5 ارب ڈالر کا منافع ہو گا۔ وہ یوکرین کو 50 ارب ڈالر تک کے قرضے فراہم کرنے کے لیے منافع کو ضمانت کے طور پر استعمال کرنا چاہتا ہے۔

G7 ممالک کے رہنما جمعرات کو اٹلی میں شروع ہونے والے اپنے سربراہی اجلاس میں اس مسئلے پر بات چیت کرنے والے ہیں۔