مئی میں یوکرین میں کم از کم 174 شہری ہلاک ہوئے: اقوام متحدہ

اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے ایک ادارے کے مطابق مئی میں یوکرین میں کم از کم 174 شہری ہلاک اور 690 زخمی ہوئے۔

یوکرین میں اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے نگران مشن نے جمعے کے روز اعلان کیا کہ یہ جون 2023ء کے بعد شہری ہلاکتوں کی سب سے زیادہ ماہانہ تعداد ہے۔

انسانی حقوق کے مذکورہ ادارے نے، 10 مئی کو روس کے ساتھ خطے کی شمالی سرحد سے باہر جارحانہ کارروائی شروع ہونے کے بعد خارکیف شہر اور مشرقی علاقے کے دیگر مقامات پر روسی افواج کے شدید حملوں کو زیادہ ہلاکتوں کا ذمہ دار قرار دیا ہے۔ اتوار کے روزخارکیف علاقے پر روسی افواج کے حملے کے نتیجے میں مکانات تباہ ہو گئے۔

دریں اثنا، وائٹ ہاؤس کے قومی سلامتی مشیر جیک سلیوان نے امریکی ٹی وی نیٹ ورک سی بی ایس کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ خارکیف میں روس کی کارروائی کی شدت "تھم گئی" ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ "خارکیف اب بھی خطرے میں ہے، لیکن روس اس علاقے میں حالیہ دنوں میں زمینی سطح پر خاطر خواہ پیشرفت نہیں کر سکا"۔

یوکرین کے صدر وولودیمیر زیلنسکی نے ہفتے کے روز جاری کردہ اپنی ویڈیو میں کہا کہ روسی فوج کا خارکیف میں آپریشن ناکام ہو گیا ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ یوکرین کی افواج یوکرینی حدود میں داخل ہونے والے روسی دستوں کو تباہ کر رہی ہیں۔