کولمبیا نے اسرائیل کو کوئلے کی برآمدات معطل کر دیں

کولمبیا نے اعلان کیا ہے کہ وہ غزہ کی پٹّی میں اسرائیلی فوجی کاروائیوں پر اسرائیل کو کوئلے کی برآمدات معطل کر دے گا۔

صدر گُستاوو پیترو نے ہفتے کے روز سوشل میڈیا پر کہا کہ جب تک اسرائیل غزہ میں شہریوں پر حملے بند نہیں کرتا، برآمدات معطل رہیں گی۔

کولمبیا، اسرائیل کو کوئلے کے بڑے برآمد کنندگان میں سے ایک ہے۔ کولمبیا کی حکومت کا کہنا ہے کہ گزشتہ سال جنوری اور اگست کے درمیان اسرائیل کو اس ملک کی برآمدات میں کوئلے کا حصہ 90 فیصد تھا۔

کولمبیا، بائیں بازو کے چھاپہ مار گروپوں سے تعلق رکھنے والے ایک اندرونی تنازعے سے گزر چکا ہے جو نصف صدی سے زیادہ عرصے جاری رہا تھا۔ اسرائیل نے فوجی مدد فراہم کی تھی، اور دونوں ملکوں کے درمیان قریبی تعلقات استوار ہوئے تھے۔

پیترو 2022ء میں کولمبیا کے بائیں بازو کے پہلے صدر بنے۔

وہ متعدد بار اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہُو کی انتظامیہ کو تنقید کا نشانہ بنا چکے ہیں۔ اُنہوں نے گزشتہ ماہ اعلان کیا تھا کہ کولمبیا، اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات توڑ دے گا۔

لاطینی امریکہ کے دیگر ممالک میں بھی بائیں بازو کی حکومتوں نے اسرائیل کے ساتھ اپنے تعلقات پر نظرثانی کے لیے اقدامات کیے ہیں۔ بولیویا نے گزشتہ سال اسرائیل سے سفارتی تعلقات منقطع کر لیے تھے اور چلی نے اپنا سفیر واپس بلا لیا تھا۔