ٹیوشن فیس میں مجوزہ اضافے کے خلاف ٹوکیو یونیورسٹی کے طلبا کی ریلی

ٹوکیو یونیورسٹی کے طلبا نے ٹیوشن فیس بڑھانے کے منصوبے کے خلاف ریلی نکالی ہے۔

جمعرات کو ٹوکیو کے ہونگو کیمپس میں تقریباً 400 افراد نے احتجاج میں حصہ لیا۔

یونیورسٹی اس وقت ٹیوشن اخراجات میں اضافے پر غور کر رہی ہے۔ حکومت کی طرف سے زیادہ سے زیادہ اضافے کی حد کے مطابق، سالانہ ٹیوشن فیس جو اب 535,800 ین یا تقریباً 3,400 ڈالر ہے اس میں لگ بھگ 100,000 ین یا تقریباً 640 ڈالر تک اضافہ کیا جا سکتا ہے۔

بعض مظاہرین نے کہا کہ ٹیوشن میں اضافہ دیہی علاقوں کے طلبا سمیت کچھ درخواست دہندگان کی حوصلہ شکنی کر سکتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس سے یونیورسٹی میں طلبا کے تنوع کو نقصان پہنچے گا۔

دیگر شرکاء نے کہا کہ ہمیشہ کچھ طلبا ایسے ہوں گے جو مالی اعانت کے اہل نہیں ہوں گے۔

طلبا نے ٹیوشن فیس میں اضافے کے منصوبے کو ختم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے ایک قرارداد منظور کی۔ وہ چاہتے ہیں کہ یونیورسٹی اس اضافے کی وجوہات بیان کرے، اور مالی اعانت کے پروگراموں کے بارے میں معلومات ظاہر کرے۔ طلبا نے یونیورسٹی سے گروپ کے ساتھ مذاکرات کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔

اوساکا کی ایک سینئر طالبہ نے کہا کہ یہ قابل فہم ہے کہ یونیورسٹی کو پیسوں کی ضرورت ہے، لیکن اضافی 100,000 ین بہت بڑی رقم ہے اور وہ دباؤ محسوس کرتی ہے۔