اقوام متحدہ کے سربراہ کا فوسل فیول کے اشتہارات پر پابندی کا مطالبہ

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتیرس نے بدھ کے روز اقوام متحدہ کے موسمیاتی ادارے کی جانب سے گلوبل وارمنگ کی شرح میں اضافے کی اطلاعات کے بعد بحران کے شدید احساس کا اظہار کیا ہے۔

ٹھیک اسی روز اپنی تقریر میں انتونیو گوتیرس نے کہا کہ ’’طویل مدتی گلوبل وارمنگ کو ایک اعشاریہ پانچ ڈگری سینٹی گریڈ تک محدود کرنے کا ہدف مشکل صورتحال سے دوچار ہے‘‘۔

’’آب و ہوا کے جہنم کی شاہراہ سے باہر نکلنے‘‘ کا مطالبہ کرتے ہوئے انہوں نے عالمی برادری سے اپیل کی کہ وہ گلوبل وارمنگ پر قابو پانے کے لیے مزید اقدامات کرے۔

انہوں نے کہا، ’’ہم میں سے ہر کوئی اپنی زندگی میں ماحول دوست ٹیکنالوجیوں کے استعمال اور فوسل فیول کو کم کرکے، تبدیلی لا سکتا ہے‘‘۔

اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے کہ بہت سی حکومتیں انسانی صحت کے لیے نقصان دہ مصنوعات کے اشتہارات کو محدود یا ممنوع قرار دیتی ہیں، اقوام متحدہ کے سربراہ نے زور دیا کہ ’’ہر ملک فوسل فیول کمپنیوں کے اشتہارات پر پابندی عائد کرے‘‘۔

انہوں نے یہ بھی خبردار کیا کہ ’’کوئی بھی ملک ماحولیاتی بحران کو تنہا حل نہیں کر سکتا‘‘۔ انہوں نے تعاون کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اس کے لیے سب کو مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔