جاپانی صنعتیں نئے کرنسی نوٹ اپنانے کی تیاری میں

جاپان 20 سالوں میں پہلی بار اپنی کاغذی کرنسی کا ڈیزائن تبدیل کر رہا ہے۔ تین نئے کرنسی نوٹ 3 جولائی سے گردش میں ہوں گے اور صنعتیں نئے نوٹ قبول کرنے کے لیے نظام نصب کرنے میں لگی ہیں۔

وزارت خزانہ کے ایک سروے سے پتہ چلا ہے کہ 90 فیصد سے زیادہ بینکوں کی اے ٹی ایم، نئے کرنسی نوٹوں کا استعمال شروع ہونے پر، ان کا لین دین کر سکیں گی۔

ٹرینوں کی تقریباً 80 سے 90 فیصد ٹکٹ مشینیں اور بڑے کنوینئس اسٹورز پر نقدی کے لین دین کا حساب رکھنے والے رجسٹر بھی تیار ہونے چاہئیں۔

لیکن پارکنگ مقامات اور ریستورانوں میں نصب خودکار چیک آؤٹ مشینوں اور ٹکٹ مشینوں میں سے صرف نصف سے توقع ہے کہ وہ نئے نوٹوں میں لین دین کر سکیں گی۔

مشروبات کی وینڈنگ مشینیوں میں سے صرف 20 سے 30 فیصد بروقت ایڈجسٹمنٹ کے لیے تیار ہیں۔

چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری ادارے کرنسی نوٹوں کی وجہ سے کی جانے تبدیلیوں پر اٹھنے والی زیادہ لاگت کے بارے میں شکایت کر رہے ہیں اور کچھ مقامی حکومتیں سرکاری اعانت کی پیشکش کر رہی ہیں۔

ان تبدیلیوں کا مقصد جعلی نوٹ بنانے کی حوصلہ شکنی کرنا اور ہر کسی کو متاثر کر سکنے والی کرنسی بنانا ہے۔