چین تائیوان کی 130 سے زیادہ اشیاء پر محصولات کی چھوٹ معطل کرے گا

چین کا کہنا ہے کہ وہ 15 جون سے تائیوان کی 134 مصنوعات پر محصولات کی رعایت معطل کر دے گا۔ تائیوان کے صدر لائی چنگ تے کے منصب سنبھالنے کے بعد سے بیجنگ تائیوان کے اقتصادی شعبے پر دباؤ بڑھاتا دکھائی دیتا ہے۔

چینی حکومت نے جمعہ کے روز کہا کہ ترجیحی ٹیرف کی شرحیں، جو کہ کراس اسٹریٹ اکنامک کوآپریشن فریم ورک معاہدے میں طے شدہ ہیں اور فی الحال مذکورہ اشیاء پر لاگو ہیں، معطل کر دی جائیں گی۔

بیجنگ نے نشاندہی کی کہ تائیوان نے یکطرفہ طور پر چین کی مصنوعات پر امتیازی پابندیاں عائد کیں۔ اس نے کہا کہ مذکورہ پابندیاں معاہدے کی خلاف ورزی کرتی ہیں اور ابھی تک برقرار ہیں۔

آزادانہ تجارت کے مذکورہ دو طرفہ معاہدے پر سنہ 2010 میں دستخط ہوئے تھے اور اس کا مقصد تجارت کو مزید آزاد بنانا تھا۔

تازہ ترین کارروائی اُس اقدام کے دائرہ کار میں توسیع ہے جو چین نے پہلے کیا تھا۔ بیجنگ نے جنوری میں ٹیرف مراعات کو معطل کرنا شروع کیا۔ تب سے اب تک اس نے 12 اشیاء پر مراعات معطل کی ہیں۔