'سپر لارج آرٹلری فائرنگ کا مظاہرہ' کیا گیا ہے: شمالی کوریا

شمالی کوریا کے اعلان کے مطابق اس نے فائرنگ کا ایک ایسا مظاہرہ کیا ہے جس میں کئی انتہائی بڑے راکٹ لانچرز شامل تھے۔ یہ اعلان اس کی جانب سے بیلسٹک میزائل داغے جانے کی اطلاعات کے ایک دن بعد سامنے آیا ہے۔

شمالی کوریا کی حکمران ورکرز پارٹی کے اخبار رودونگ سِن مُن نے جمعہ کو ایک رپورٹ شائع کی جس میں کہا گیا ہے کہ ملک کے رہنما کِم جونگ اُن نے 600 ملی میٹر راکٹ توپ خانے کی فائرنگ کے مظاہرے کی نگرانی کی۔

ایک تصویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ موبائل لانچروں سے بیک وقت 18 میزائل داغے جا رہے ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ توپ خانے کے عملے نے 365 کلومیٹر فاصلے پر ایک جزیرے کو نشانہ بنایا۔ جنوبی کوریا کے میڈیا کا کہنا ہے کہ اِن میزائلوں کی مار کی حد ایک بڑے جنوبی ایئر بیس تک ہو سکتی ہے۔

پیونگ یانگ کا دعویٰ ہے کہ یہ میزائل جوہری ہتھیار لے جانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ اس کے مطابق مشق کا مقصد اس بات کا اظہار تھا کہ ملک، جنوبی کوریا کے خلاف حملہ کرنے میں پہل سے نہیں ہچکچائے گا۔