اقوام متحدہ کے سربراہ کا اسرائیل سے رفح میں جارحیت فوری بند کرنے کا مطالبہ

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیرس نے اسرائیل سے غزہ کی پٹی کے جنوبی علاقے رفح پر حملے فوری بند کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

جناب گوتیرس نے منگل کو جزائر غرب الہند کے ملک انٹیگوا اور باربُوڈا میں این ایچ کے کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں یہ بات کہی۔

جناب گوتیرس نے کہا کہ سیکریٹری جنرل کے منصب پر فائز رہتے ہوئے ان کے دور میں غزہ میں اسرائیلی حملوں کے باعث شہریوں کی ہلاکتوں اور بنیادی ڈھانچے اور مکانات کی تباہی کی "ماضی میں کوئی مثال نہیں ملتی"۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس سطح کی تباہی ناقابل قبول ہے۔

جناب گوتیرس نے اسرائیل کے لیے بین الاقوامی عدالت انصاف کے حالیہ عبوری حکم نامے کے بارے میں بھی بات کی جس میں رفح میں حملے کو فوری طور پر روکنے کا کہا گیا تھا۔

جناب گوتیرس نے کہا، "پیغام سادہ ہے، بین الاقوامی عدالت انصاف کے فیصلوں کی تعمیل کریں۔ ہم ایک ایسی دنیا میں ہیں جہاں ہمیں اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ بین الاقوامی قانون کی بالادستی ہو، بین الاقوامی انسانی قانون کی بالادستی ہو، قانون کی حکمرانی کی بالادستی ہو اور عدالتوں کے فیصلوں اور عالمی عدالتوں کا احترام کیا جائے کیونکہ ان کے فیصلوں کی پابندی کرنا ہمارے لیے لازمی ہے"۔ انہوں نے کہا کہ ’’یہ رائے نہیں ہے، یہ ایک ایسا فیصلہ ہے جس کی تعمیل کی جانے چاہیے اور اسرائیل کو اس فیصلے کی پابندی کرنی چاہیے‘‘۔