کِم نے جاسوس سیارے کے لانچ میں ناکامی کا اعتراف کر لیا

شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ اُن نے پہلی بار اعتراف کیا ہے کہ پیر کے روز پیانگ یانگ کا چوتھا فوجی جاسوس مصنوعی سیارہ داغنے کا عمل ناکام ہو گیا ہے۔

شمالی کوریا کی حکمراں ورکرز پارٹی کے اخبار رودونگ سِنمُن نے بدھ کے روز خبر دی تھی کہ کم جونگ اُن نے منگل کو اکیڈمی آف ڈیفنس سائنس میں خطاب کیا ہے۔ یہ اکیڈمی فوجی جاسوس سیٹلائٹ تیار کرتی ہے۔

کم جونگ اُن نے مبینہ طور پر بتایا کہ فوجی جاسوس سیٹلائٹ لے جانے والا ایک راکٹ فضا میں پھٹ گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ پہلے مرحلے کے انجن میں خرابی کی وجہ سے خود کو تباہ کرنے والا نظام فعال ہوگیا تھا۔

کِم نے زور دے کر کہا کہ شمالی کوریا کے پاس فوجی جاسوس سیٹلائٹس کا ہونا جائز ہے کیونکہ ملک کو امریکی فوجی چالوں اور اشتعال انگیز کارروائیوں کا ضرور مقابلہ کرنا ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ شمالی کوریا کی دفاعی اور ڈیٹرنس صلاحیتوں کو مزید مضبوط بنانے کے ساتھ ساتھ ملک کی خودمختاری کو ممکنہ خطرات سے بچانے کے لیے اِن سیٹلائٹس کی ضرورت ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگرچہ پیر کے لانچ سے مطلوبہ نتائج حاصل نہیں ہوئے، لیکن شمالی کوریا اس ناکامی سے خوفزدہ نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ قوم اس کے بجائے پہلے سے زیادہ کوشش کرے گی۔