رفح میں اسرائیلی حملہ، کم از کم 45 افراد ہلاک

غزہ میں محکمۂ صحت کے حکام کے مطابق، اتوار کے روز رفح میں اسرائیلی فضائی حملے میں کم از کم 45 افراد ہلاک ہو گئے۔ این ایچ کے، کی جانب سے متاثرہ مقام کی لی گئی وڈیو فوٹیج میں مکمل طور پر تباہ شدہ خیمے نظر آ رہے ہیں۔

غزہ میں شہریوں کی ہلاکتیں مسلسل بڑھنے پر بین الاقوامی تنقید میں اضافہ ہو رہا ہے۔

اسرائیلی افواج کی طرف سے کیا گیا یہ حملہ ایک ایسے وقت ہوا کہ جب بین الاقوامی عدالتِ انصاف نے عبوری اقدامات جاری کر کے اسرائیل کو حکم دیا تھا کہ رفح میں جارحیت فوری طور پر روک دی جائے۔

این ایچ کے، کے غزہ دفتر کی جانب سے لی گئی وڈیو فوٹیج میں یہ بھی دکھایا گیا ہے کہ رہائشی جلے ہوئے ملبے سے ڈبہ بند خوراک اُٹھا رہے ہیں۔

اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا کہ حملے میں حماس کے دو اعلیٰ ارکان کو نشانہ بنایا گیا تھا۔ اُس نے مزید کہا کہ عام شہریوں کی ہلاکتوں کے خطرے کو کم کرنے کے لیے متعدد اقدامات کیے گئے تھے۔

اسرائیلی حکومت کا کہنا ہے کہ ابتدائی اطلاعات سے پتہ چلتا ہے کہ حملے کے بعد آگ بھڑک اُٹھی، جس سے بظاہر عام شہری ہلاک ہوئے ہیں۔

حکومت نے یہ بھی کہا کہ شہریوں کی ہلاکتیں افسوسناک ہیں، ’’لیکن یہ وہ جنگ ہے جو حماس چاہتا تھا اور اُس نے شروع کی تھی‘‘۔