ین کو تقویت دینے کے لیے BOJ کا شرح سود میں اضافہ: مورگن اسٹینلے

ایک بڑے امریکی سرمایہ کاری بینک کے ایشیا کے منتظم اعلیٰ مورگن اسٹینلے نے توقع ظاہر کی ہے کہ امریکی شرح سود میں کمی اور جاپان میں شرح میں اضافے کے بعد ڈالر کے مقابلے میں جاپانی ین مضبوط ہوگا۔

گوکل لاروئیا نے گزشتہ ہفتے NHK کے ساتھ ایک انٹرویو میں یہ پیشین گوئی کی تھی۔

لاروئیا نے کہا: "صرف افراط زر کے ماحول کو دیکھتے ہوئے، یہ توقع ہے کہ بینک آف جاپان آگے بڑھ کر شرحوں میں اضافہ شروع کر دے گا۔ ہمارا خیال ہے کہ ین، اگلے 12 سے 18 مہینوں میں، الٹ کر ڈالر کے مقابلے میں مضبوط ہونا شروع کر دے گا"۔

اگرچہ جاپان کا کلیدی نِکّے حصص اشاریہ مارچ میں 40,000 کی سطح عبور کرنے کے بعد 38,000 کے آس پاس رک گیا ہے، تاہم لاروئیا کو توقع ہے کہ بیرون ملک سے سرمایہ کاری حصص قیمتوں کو بڑھاتی رہے گی۔

انہوں نے کہا: "جاپانی کمپنیوں کا رویہ کارپوریٹ گورننس کے نقطہ نظر سے، سرمائے کی واپسی کے نقطہ نظر سے اور اس کے نتیجے میں عالمی سرمایہ کار طبقے کو پیش کیے جانے والے منافع کے حوالے سے، ڈرامائی طور پر تبدیل ہو گیا ہے۔ اس لیے میکرو اور مائیکرو دونوں وجوہات سے جاپان میں دلچسپی بہت زیادہ ہے"۔

لاروئیا نے یہ بھی توقع ظاہر کی کہ حالات بالآخر جاپان کی اسٹاک مارکیٹ کے لیے تیزی کے دور کو ہوا دیں گے۔