تائیوانی صدر کا چینی فوجی مشقوں کے جواب میں تبادلوں کا مطالبہ

تائیوان کے صدر لائی چِنگ تے نے تائیوان کے قریب چین کی فوجی مشقوں کے بعد چین سے "علاقائی استحکام کی بھاری ذمہ داری تائیوان کے ساتھ بانٹنے" کا مطالبہ کیا ہے۔

لائی نے اتوار کو صحافیوں کو بتایا کہ وہ چین کی مشقوں کے بارے میں تشویش کے اظہار کے لیے امریکہ اور دیگر ممالک کے شکر گزار ہیں۔

انہوں نے کہا، "عالمی برادری کسی بھی ملک کی جانب سے آبنائے تائیوان میں ہلچل مچانے اور علاقائی استحکام کو متاثر کرنے کو قبول نہیں کرے گی"۔

لائی نے چین کے ساتھ تبادلوں اور تعاون کے ذریعے امن اور خوشحالی کے لیے اپنے موقف کا اعادہ کیا۔

پیر کو اپنی افتتاحی تقریر میں، لائی نے حالات کو جوں کا توں برقرار رکھنے اور بیجنگ کے خودمختاری کے دعووں کو عملی طور پر مسترد کرتے ہوئے چین کے ساتھ امن اور خوشحالی کی کوشش پر زور دیا تھا۔

چین نے احتجاج کرتے ہوئے جمعرات کو تائیوان کے قریب مشقیں کیں۔ چائنا سینٹرل ٹیلی ویژن کے ملٹری چینل نے کہا کہ مشقیں جمعہ کو کامیابی کے ساتھ مکمل ہو گئیں۔